12-11-2017 Qata -Hum Aap Daily

وقت وقت ہی دھوپ کے آثار تلک لاتا ہے وقت ہی سایۂ دیوار تلک لاتا ہے وقت ہی کرتا ہے بیگانۂ اقدارِ جنوں وقت ہی کیفرِکردار تلک لاتا ہے عبید اعظم اعظمی www.humaap.azmi.in  

ہر طرف دھوپ تھی شعلے تھے، شرارے بھی تھے- عبید اعظم اعظمی – Urdu Poetry by Obaid Azam Azmi

سرفرازی کا سفر ہر طرف دھوپ تھی شعلے تھے، شرارے بھی تھے آزمائش میں گھرے ځواب ہمارے بھی تھے سر فرازی کا سفر کل بھی نہیں تھا آساں جیتنے والے کئی معرکے ہارے بھی تھے عبیدؔ اعظم اعظمی Date : 11/11/2017  Published in Daily Urdu News Paper ‘Hum Aap Daily’ Mumbai-400011. India Urdu Poetry –…